یوم استحصال کشمیر، وادی میں ہڑتال، پاکستان کا حمایت جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ

اسلام آباد: بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے اور یک طرفہ اقدامات کے 3 سال مکمل ہو گئے، پاکستانی قوم اور دنیا بھر میں مقیم کشمیری عوام آج یوم استحصال منا رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق یوم استحصال کشمیر پر پاکستان نے کشمیریوں کی منصفانہ جدوجہد کی سیاسی، اخلاقی اور سفارتی حمایت جاری رکھنے کےعزم کا اعادہ کیا ہے، اور مقبوضہ کشمیر کی جغرافیائی حیثیت اور آبادی کا تناسب تبدیل کرنے کے بھارتی اقدامات ناقابل قبول قرار دیے۔

حریت کانفرنس کی جانب سے آج مقبوضہ کشمیر میں مکمل ہڑتال کی اپیل کی گئی ہے۔

یوم استحصال کشمیر کے موقع پر صدر مملکت ڈاکٹرعارف علوی نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ بھارت کے 5 اگست کے اقدامات سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہیں، بھارت جموں و کشمیر میں زمینوں پر قبضے اور غیر کشمیریوں کی آباد کاری جیسے اقدامات کر رہا ہے۔

انھوں نے کہا پاکستان ہمیشہ کی طرح کشمیری بھائیوں کی منصفانہ جدوجہد میں شانہ بشانہ کھڑا رہے گا۔

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے پیغام میں کہا کہ جب تک کشمیریوں کو آزادی نہیں مل جاتی ایک بھی پاکستانی چین سے نہیں بیٹھے گا،بھارت نے 370 اور 35 اے میں تبدیلی کر کے اقوام متحدہ کی قراردادوں کو پامال کیا ہے، اور خطے کے امن و استحکام کو تباہی کی جانب دھکیل دیا ہے۔

بلاول نے کہا 3 سال سے مقبوضہ وادی کے عوام آزادی اظہار، پر امن اجتماع سمیت تمام بنیادی حقوق سے محروم ہیں، اقوام متحدہ اپنے چارٹر پر عمل درآمد سے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق بحال کرائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں