نووک جوکووچ کو ایک بار پھر آسٹریلین بارڈر حکام نےحراست میں لے لیا

کنیبرا: معروف ٹینس اسٹار نووک جوکووچ کو ایک بار پھر حراست میں لےلیاگیا ہے۔

خبر ایجنسی کے مطابق عالمی نمبر ایک ٹینس اسٹار نوواک جوکووچ کا ویزا منسوخی کے بعد آسٹریلین بارڈر حکام نےحراست میں لے لیا ہے، یہ گذشتہ چند دنوں میں دوسری بار ہوا ہے جب جوکووچ کوحراست میں لیا گیا۔

خبر ایجنسی کے مطابق اب عالمی نمبر ایک ٹینس اسٹار نوواک جوکووچ کی آسٹریلین اوپن میں شرکت کے امکانات معدوم ہوگئے ہیں، حراست میں لینے کے بعد آسٹریلین بارڈر حکام آج جوکووچ کا انٹرویو کریں گے۔

غیرملکی میڈیا کے مطابق جوکووچ پر تین سال کیلئے آسٹریلیا میں داخلے پر پابندی لگ سکتی ہے، جوکووچ کے پاس فیصلے کو عدالت میں دوبارہ چیلنج کرنے کا آپشن موجود ہے۔

گذشتہ روز آسٹریلیا کے امیگریشن کے وزیر الیکس ہاک نے اپنے اختیارات کا استعمال کرتے ہوئے نوواک جوکووچ کا ویزا منسوخ کیا تھا، یہ اقدام اس ضمن میں اٹھایا گیا ہے جب ٹینس اسٹار کے وکلا اس فیصلے کے خلاف فوری حکم امتناعی دائر کرنے کی تیاری کر رہے تھے۔

عالمی نمبر ایک ٹینس اسٹارنوواک جوکووچ نے تسلیم کیا تھا کہ آسٹریلیا آمد کیلئے بھرے جانے والےفارم میں غلطیاں ہوئی تھیں، جوکووچ نےتسلیم کیا کہ گزشتہ ماہ انہوں نےایک صحافی سےملاقات کی تھی جب انہیں کوروناتھا لیکن یہ ایک اندازےکی غلطی تھی۔

یاد رہے کہ 10 جنوری کو آسٹریلوی عدالت نے حکومت کا نوواک جوکووچ کا ویزا منسوخ کرنےکا فیصلہ کالعدم قرار دے دیتے ہوئے ٹینس ‏اسٹار کے آسٹریلیا میں داخلے کو قانونی قرار دیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں