سعودی عرب :ورچوئل اجلاس کے دوران شاہ سلمان نے نئے قانون کی منظوری دے دی

ریاض : خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی زیر صدارت منعقدہ ورچوئل اجلاس کے دوران سعودی کابینہ نے معمر افراد کے حقوق سمیت مختلف قوانین کی منظوری دی ہے۔

اس حوالے سے سعودی خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ کابینہ اجلاس میں مختلف نوعیت کے 12اہم فیصلے کیے گئے ہیں۔

کابینہ اجلاس میں کورونا وائرس کے حوالے سے سعودی شہریوں اور مملکت میں رہنے والے غیرملکیوں سے اپیل کی گئی کہ وہ کورونا ویکسین کی مقررہ خوراکیں جلد سے جلد لگوالیں۔

کابینہ کے مطابق وبا کی بدلتی ہوئی صورت حال پر نظر رکھی جارہی ہے، بچاؤ کی تدابیر کے مؤثر ہونے اور نہ ہونے کا بھی جائزہ لیا جارہا ہے۔

خادم حرمین شریفین نے اجلاس کے آغاز میں کہا کہ یہ بات پیش نظر رہے کہ مملکت قیام کے روز اول سے آج تک اسلامی نظام پر عمل پیرا ہے اور آئندہ بھی رہے گی۔

کابینہ کے ارکان نے شوریٰ کے افتتاحی اجلاس کے موقع پر شاہی خطاب پر قدرو منزلت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ شاہ سلمان نے جامع تصور پیش کرکے مختلف شعبوں میں سعودی وژن 2030 کے مطابق ملکی ترقی و خوش حالی کے حوالے سے غیر متزلزل اصول اجاگر کیے۔

انہوں نے سیاسی، اقتصادی حالات اور حالیہ مسائل پر مملکت کی خارجہ پالیسی کو نمایاں کیا، انہوں نے مشرق وسطیٰ اور دنیا بھر میں امن و سلامتی کے فروغ کے حوالے سے مملکت کی کوششوں کو آئندہ بھی جاری رکھنے کا عزم ظاہر کیا۔

کابینہ ارکان نے کم آمدنی والے اور مصیبت زدہ ممالک کا ساتھ دینے، پناہ گزینوں اور مصیبت زدگان کی مدد کی پالیسی پر گامزن رہنے کا بھی عزم ظاہر کیا۔

سعودی کابینہ نے گذشتہ دنوں برادر اور دوست ملکوں کے ساتھ ہونے والے مذاکرات اور ملاقاتوں کے نتائج کا جائزہ لیتے ہوئے کہا کہ ان کا مقصد مشترکہ تعاون کے رشتوں کو راسخ کرنا اور زیادہ بڑے پیمانے پر باہمی تعلقات کو عروج کی نئی منزلوں تک پہنچانا تھا۔

قائم مقام وزیر اطلاعات ڈاکٹر ماجد القصبی نے سعودی خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ کابینہ نے خطے اور دنیا بھر کے حالات حاضرہ کا جائزہ لیا، عالمی امن و سلامتی، استحکام اور خوش حالی کی خاطر کی جانے والی بین الاقوامی کوششوں کا بھی جائزہ لیا گیا۔

کابینہ نے کورونا وائرس کی وبائی صورت حال کا جائزہ لیتے ہوئے مقامی شہریوں، مقیم غیر ملکیوں، حرمین شریفین کے زائرین کی صحت و سلامتی کی خاطر حفاظتی تدابیر کے موثر ہونے کی بابت بھی بات چیت کی۔

کابینہ نے اس امر پر زور دیا کہ وائرس سے بچاؤ کے لیے مقرر تدابیر کی پابندی کی جائے اور ویکسین کی تمام مطلوبہ خوراکیں جلد سے جلد لگوا لی جائیں۔

کابینہ نے اقتصادی و ترقیاتی امور کونسل اور سیاسی و سلامتی کونسل امور، کابینہ کے ماتحت جنرل کمیٹی اور کابینہ کے ماتحت ماہرین کے ادارے کی قراردادوں کا بھی جائزہ لیا۔

کابینہ نے متعدد فیصلے کیے جس کے مطابق عراق کے ساتھ ابلاغی تعاون کی مفاہمتی یادداشت کا اختیار وزیر اطلاعات کو دیا، جبکہ ماحولیات کے شعبے میں تعاون کے لیے جاپان کے ساتھ مفاہمتی یادداشت کی منظوری دی۔

سرمایہ کاری کی حوصلہ افزائی کے سلسلے میں سلطنت عمان کے ساتھ طے پانے والی مفاہمتی یادداشت کی منظوری دی۔

وزیر خزانہ کو برطانیہ اور شمالی آئرلینڈ کے ساتھ مالیاتی خدمات اور سرکاری خزانے کے امور کو جدید خطوط پر استوار کرنے کے سلسلے میں تعاون کی مفاہمتی یادداشت کا اختیار دیا۔

مدینہ اسلامی یونیورسٹی کے سربراہ کو اسلامی تعاون تنظیم کے ساتھ مفاہمتی یادداشت کا اختیار تفویض کیا, کھارے پانی کو استعمال کے قابل بنانے والی ٹیکنالوجی، پائپ لائنز کی اصلاح و مرمت اور آپریشنل امور کے سلسلے میں روس کے ساتھ تعاون کی مفاہمتی یادداشت کی منظوری دے دی۔

کابینہ نے ممنوعہ برآمدات کے ضوابط کی بھی منظوری دے دی، کابینہ نے ایٹمی کنٹرول بورڈ کی مجلس انتظامیہ کے ارکان کی تقرریاں بھی کیں جبکہ فروغ افرادی قوت فنڈ کے اختتامی حساب کی بھی منظوری دی۔

کابینہ نے پندرہویں گریڈ کے لیے متعدد عہدیداروں کی ترقی کے احکام بھی جاری کیے، کابینہ میں متعدد سرکاری اداروں کی سالانہ رپورٹیں بھی پیش کی گئیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں