شاہ لطیف یونیورسٹی کی طالبہ کے مبینہ اغوا کی کوشش میں پیش رفت

خیرپور کی شاہ عبداللطیف یونیورسٹی کی طالبہ کے مبینہ اغوا کی کوشش کے معاملے میں نیا موڑ آ گیا۔

ملزم صفدر وسان کے والد متاثرہ لڑکی کے گھر پہنچے اور صفدر وسان کے والد نے متاثرہ لڑکی اور اس کے والد سے معافی مانگ لی۔

متاثرہ لڑکی اور اس کے والد نے صفدر وسان کو معاف کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے کسی لالچ یا دباؤ میں آ کر معافی نہیں دی۔

دوسری طرف پولیس نے متاثرہ لڑکی کی پہلے سے دی گئی درخواست پر ملزم صفدر وسان سمیت 16 افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔

چیف جسٹس سندھ ہائیکورٹ نے بھی یونیورسٹی بس واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے فریقین کو 28 دسمبر کو طلب کر رکھا ہے۔

متاثرہ طالبہ نے احتجاج کرتے ہوئے الزام لگایا تھا کہ ملزم صفدر نے یونیورسٹی بس سے اسے اغوا کرنے کی کوشش کی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں